سنن ابو داؤد - مناسک حج کا بیان - 1717
حدیث نمبر: 1721
حَدَّثَنَا زُهَيْرُ بْنُ حَرْبٍ، ‏‏‏‏‏‏وَعُثْمَانُ بْنُ أَبِي شَيْبَةَ الْمَعْنَى، ‏‏‏‏‏‏قَالَا:‏‏‏‏ حَدَّثَنَا يَزِيدُ بْنُ هَارُونَ، ‏‏‏‏‏‏عَنْ سُفْيَانَ بْنِ حُسَيْنٍ، ‏‏‏‏‏‏عَنْ الزُّهْرِيِّ، ‏‏‏‏‏‏عَنْ أَبِي سِنَانٍ، ‏‏‏‏‏‏عَنْ ابْنِ عَبَّاسٍ، ‏‏‏‏‏‏أَنَّ الْأَقْرَعَ بْنَ حَابِسٍ سَأَلَ النَّبِيَّ صَلَّى اللَّهُ عَلَيْهِ وَسَلَّمَ، ‏‏‏‏‏‏فَقَالَ:‏‏‏‏ يَا رَسُولَ اللَّهِ، ‏‏‏‏‏‏الْحَجُّ فِي كُلِّ سَنَةٍ أَوْ مَرَّةً وَاحِدَةً ؟ قَالَ:‏‏‏‏ بَلْ مَرَّةً وَاحِدَةً فَمَنْ زَادَ فَهُوَ تَطَوُّعٌ. قَالَ أَبُو دَاوُد:‏‏‏‏ هُوَ أَبُو سِنَانٍ الدُّؤَلِيُّ، ‏‏‏‏‏‏كَذَا قَالَ عَبْدُ الْجَلِيلِ بْنُ حُمَيْدٍ، ‏‏‏‏‏‏وَ سُلَيْمَانُ بْنُ كَثِيرٍ جَمِيعًا:‏‏‏‏ عَنْ الزُّهْرِيِّ، ‏‏‏‏‏‏وقَالَ عُقَيْلٌ:‏‏‏‏ عَنْ سِنَانٍ.
عبداللہ بن عباس (رض) کہتے ہیں کہ اقرع بن حابس (رض) نے نبی اکرم سے پوچھا : اللہ کے رسول ! کیا حج ہر سال (فرض) ہے یا ایک بار ؟ آپ نے فرمایا : (ہر سال نہیں) بلکہ ایک بار ہے اور جو ایک سے زائد بار کرے تو وہ نفل ہے ١ ؎۔ ابوداؤد کہتے ہیں : ابوسنان سے مراد ابوسنان دؤلی ہیں، اسی طرح عبدالجلیل بن حمید اور سلیمان بن کثیر نے زہری سے نقل کیا ہے، اور عقیل سے ابوسنان کے بجائے صرف سنان منقول ہے۔
تخریج دارالدعوہ : سنن النسائی/المناسک ١ (٢٦٢١) ، سنن ابن ماجہ/المناسک ٢ (٢٨٨٦) ، ( تحفة الأشراف : ٦٥٥٦) ، وقد أخرجہ : مسند احمد (١/٢٥٥، ٢٩٠، ٣٠١، ٣٠٣، ٣٢٣، ٣٢٥، ٣٥٢، ٣٧٠، ٣٧١) ، سنن الدارمی/الحج ٤ (١٨٢٩) (صحیح) (متابعات کی بنا پر یہ روایت صحیح ہے ورنہ اس کی سند میں واقع سفیان بن حسین کی زھری سے روایت میں ضعف ہے )
وضاحت : ١ ؎ : حج اسلام کا پانچواں بنیادی رکن ہے، جس کی فرضیت ٥ یا ٦ ہجری میں ہوئی۔
Narrated Aqra ibn Habib: Ibn Abbas said: Aqra ibn Habis asked the Prophet ﷺ saying: Messenger of Allah hajj is to be performed annually or only once? He replied: Only once, and if anyone performs it more often, he performs a supererogatory act. Abu Dawud said: The narrator Abu Sinan is Abu Sinan al-Du'wail. The same has been reported by both Abd al-Jalil bin Humaid and Sulaiman bin Kathir from al-Zuhri. The narrator 'Uqail reported the name "Sinan".
Top