صحيح البخاری - جہاد اور سیرت رسول اللہ ﷺ - 2668
حَدَّثَنَا الْحَسَنُ بْنُ صَبَّاحٍ ، ‏‏‏‏‏‏حَدَّثَنَا مُحَمَّدُ بْنُ سَابِقٍ ، ‏‏‏‏‏‏حَدَّثَنَا مَالِكُ بْنُ مِغْوَلٍ ، ‏‏‏‏‏‏قَالَ:‏‏‏‏ سَمِعْتُ الْوَلِيدَ بْنَ الْعَيْزَارِ ذَكَرَ، ‏‏‏‏‏‏عَنْ أَبِي عَمْرٍو الشَّيْبَانِيِّ ، ‏‏‏‏‏‏قَالَ:‏‏‏‏ قَالَ عَبْدُ اللَّهِ بْنُ مَسْعُودٍ رَضِيَ اللَّهُ عَنْهُ، ‏‏‏‏‏‏سَأَلْت رَسُولَ اللَّهِ صَلَّى اللَّهُ عَلَيْهِ وَسَلَّمَ، ‏‏‏‏‏‏قُلْتُ:‏‏‏‏ يَا رَسُولَ اللَّهِ، ‏‏‏‏‏‏أَيُّ الْعَمَلِ أَفْضَلُ ؟ قَالَ:‏‏‏‏ الصَّلَاةُ عَلَى مِيقَاتِهَا، ‏‏‏‏‏‏قُلْتُ:‏‏‏‏ ثُمَّ أَيٌّ، ‏‏‏‏‏‏قَالَ:‏‏‏‏ ثُمَّ بِرُّ الْوَالِدَيْنِ، ‏‏‏‏‏‏قُلْتُ:‏‏‏‏ ثُمَّ أَيٌّ، ‏‏‏‏‏‏قَالَ:‏‏‏‏ الْجِهَادُ فِي سَبِيلِ اللَّهِ، ‏‏‏‏‏‏فَسَكَتُّ عَنْ رَسُولِ اللَّهِ صَلَّى اللَّهُ عَلَيْهِ وَسَلَّمَ، ‏‏‏‏‏‏وَلَوِ اسْتَزَدْتُهُ لَزَادَنِي.
ہم سے حسن بن صباح نے بیان کیا ‘ کہا ہم سے محمد بن سابق نے بیان کیا ‘ کہا ہم سے مالک بن مغول نے بیان کیا ‘ کہا کہ میں نے ولید بن عیزار سے سنا ‘ ان سے سعید بن ایاس ابوعمرو شیبانی نے بیان کیا اور ان سے عبداللہ بن مسعود (رض) نے کہا کہ میں نے رسول اللہ سے پوچھا کہ دین کے کاموں میں کون سا عمل افضل ہے ؟ آپ نے فرمایا وقت پر نماز پڑھنا۔ میں نے پوچھا اس کے بعد ؟ آپ نے فرمایا والدین کے ساتھ نیک سلوک کرنا۔ میں نے پوچھا اور اس کے بعد ؟ آپ نے فرمایا اللہ کے راستے میں جہاد کرنا۔ پھر میں نے آپ سے زیادہ سوالات نہیں کئے ‘ ورنہ آپ اسی طرح ان کے جوابات عنایت فرماتے۔
Narrated Abdullah bin Masud (RA): I asked Allah's Apostle, "O Allah's Apostle ﷺ ! What is the best deed?" He replied, "To offer the prayers at their early stated fixed times." I asked, "What is next in goodness?" He replied, "To be good and dutiful to your parents." I further asked, what is next in goodness?" He replied, "To participate in Jihad in Allah's Cause." I did not ask Allah's Apostle ﷺ anymore and if I had asked him more, he would have told me more.
Top