صحیح مسلم - رضاعت کا بیان - 3563
حَدَّثَنَا يَحْيَی بْنُ يَحْيَی قَالَ قَرَأْتُ عَلَی مَالِکٍ عَنْ عَبْدِ اللَّهِ بْنِ أَبِي بَکْرٍ عَنْ عَمْرَةَ أَنَّ عَائِشَةَ أَخْبَرَتْهَا أَنَّ رَسُولَ اللَّهِ صَلَّی اللَّهُ عَلَيْهِ وَسَلَّمَ کَانَ عِنْدَهَا وَإِنَّهَا سَمِعَتْ صَوْتَ رَجُلٍ يَسْتَأْذِنُ فِي بَيْتِ حَفْصَةَ قَالَتْ عَائِشَةُ فَقُلْتُ يَا رَسُولَ اللَّهِ هَذَا رَجُلٌ يَسْتَأْذِنُ فِي بَيْتِکَ فَقَالَ رَسُولُ اللَّهِ صَلَّی اللَّهُ عَلَيْهِ وَسَلَّمَ أُرَاهُ فُلَانًا لِعَمِّ حَفْصَةَ مِنْ الرَّضَاعَةِ فَقَالَتْ عَائِشَةُ يَا رَسُولَ اللَّهِ لَوْ کَانَ فُلَانٌ حَيًّا لِعَمِّهَا مِنْ الرَّضَاعَةِ دَخَلَ عَلَيَّ قَالَ رَسُولُ اللَّهِ صَلَّی اللَّهُ عَلَيْهِ وَسَلَّمَ نَعَمْ إِنَّ الرَّضَاعَةَ تُحَرِّمُ مَا تُحَرِّمُ الْوِلَادَةُ
یحییٰ بن یحیی، مالک، عبداللہ بن ابی بکر، حضرت عمرہ (رض) سے روایت ہے کہ سیدہ عائشہ (رض) نے اسے خبر دی کہ رسول اللہ (صلی اللہ علیہ وآلہ وسلم) ان کے پاس تھے اور حضرت عائشہ (رض) نے آواز سنی کہ ایک آدمی حضرت حفصہ (رض) کے گھر میں اجازت مانگ رہا ہے عائشہ (رض) فرماتی ہیں میں نے عرض کیا اے اللہ کے رسول ! یہ آدمی آپ (صلی اللہ علیہ وآلہ وسلم) کے گھر کی اجازت مانگ رہا ہے رسول اللہ (صلی اللہ علیہ وآلہ وسلم) نے فرمایا میرا خیال ہے کہ یہ فلاں ہوگا حضرت حفصہ (رض) کے رضاعی چچا کے بارے میں فرمایا عائشہ (رض) نے عرض کیا اے اللہ کے رسول اگر میرا رضاعی چچا زندہ ہوتا تو کیا وہ میرے پاس ملاقات کے لئے آسکتا تھا۔ رسول اللہ (صلی اللہ علیہ وآلہ وسلم) نے فرمایا ہاں بیشک رضاعت بھی ان رشتوں کو حرام کردیتی ہے جن کو ولادت حرام کرتی ہے۔
Top