سنن الترمذی - لباس کا بیان - 1790
حدیث نمبر: 1720
حَدَّثَنَا إِسْحَاق بْنُ مَنْصُورٍ، حَدَّثَنَا عَبْدُ اللَّهِ بْنُ نُمَيْرٍ، حَدَّثَنَا عُبَيْدُ اللَّهِ بْنُ عُمَرَ، عَنْ نَافِعٍ، عَنْ سَعِيدِ بْنِ أَبِي هِنْدٍ، عَنْ أَبِي مُوسَى الْأَشْعَرِيِّ، أَنّ رَسُولَ اللَّهِ صَلَّى اللَّهُ عَلَيْهِ وَسَلَّمَ قَالَ:‏‏‏‏ حُرِّمَ لِبَاسُ الْحَرِيرِ وَالذَّهَبِ عَلَى ذُكُورِ أُمَّتِي، ‏‏‏‏‏‏وَأُحِلَّ لِإِنَاثِهِمْ ، ‏‏‏‏‏‏قَالَ أَبُو عِيسَى:‏‏‏‏ وَفِي الْبَاب، ‏‏‏‏‏‏عَنْ عُمَرَ، ‏‏‏‏‏‏وَعَلِيٍّ، ‏‏‏‏‏‏وَعُقْبَةَ بْنِ عَامِرٍ، ‏‏‏‏‏‏وَأَنَسٍ، ‏‏‏‏‏‏وَحُذَيْفَةَ، ‏‏‏‏‏‏وَأُمِّ هَانِئٍ، ‏‏‏‏‏‏وَعَبْدِ اللَّهِ بْنِ عَمْرٍو، ‏‏‏‏‏‏وَعِمْرَانَ بْنِ حُصَيْنٍ، ‏‏‏‏‏‏وَعَبْدِ اللَّهِ بْنِ الزُّبَيْرِ، ‏‏‏‏‏‏وَجَابِرٍ، ‏‏‏‏‏‏وَأَبِي رَيْحَانَ، ‏‏‏‏‏‏وَابْنِ عُمَرَ، ‏‏‏‏‏‏وَالْبَرَاءِ، ‏‏‏‏‏‏وَوَاثِلَةَ بْنِ الْأَسْقَعِ، ‏‏‏‏‏‏قَالَ أَبُو عِيسَى:‏‏‏‏ هَذَا حَدِيثٌ حَسَنٌ صَحِيحٌ.
ابوموسیٰ اشعری (رض) سے روایت ہے کہ رسول اللہ نے فرمایا : ریشم کا لباس اور سونا میری امت کے مردوں پر حرام ہے اور ان کی عورتوں کے لیے حلال کیا گیا ہے ١ ؎۔
امام ترمذی کہتے ہیں : ١ - یہ حدیث حسن صحیح ہے، ٢ - اس باب میں عمر، علی، عقبہ بن عامر، انس، حذیفہ، ام ہانی، عبداللہ بن عمرو، عمران بن حصین، عبداللہ بن زبیر، جابر، ابوریحان، ابن عمر، براء، اور واثلہ بن اسقع (رض) سے بھی احادیث آئی ہیں۔
تخریج دارالدعوہ : سنن النسائی/الزینة ٤٠ (٥١٥١) ، و ٧٤ (٥٢٦٧) ، (تحفة الأشراف : ٨٩٩٨) ، و مسند احمد (٤/٣٩٢، ٣٩٣، ٤٠٧) (صحیح )
وضاحت : ١ ؎ : مسلمان مردوں کے لیے سونا اور ریشم کے کپڑے حرام ہیں ، حرمت کی کئی وجہیں ہیں : کفار و مشرکین سے اس میں مشابہت پائی جاتی ہے ، زیب و زینت عورتوں کا خاص وصف ہے ، مردوں کے لیے یہ پسندیدہ نہیں ، اس پہلو سے یہ دونوں حرام ہیں ، اسلام جس سادگی کی تعلیم دیتا ہے یہ اس سادگی کے خلاف ہے ، حالانکہ سادگی رسول اللہ کے فرمان کے مطابق ایمان کا حصہ ہے ، آپ کا ارشاد ہے «البذاذة من الإيمان» یعنی سادہ اور بےتکلف رہن سہن اختیار کرنا ایمان کا حصہ ہے ، یہ دونوں چیزیں عورتوں کے لیے حلال ہیں ، لیکن حلال ہونے کا یہ مطلب نہیں ہے کہ ان کے استعمال میں حد سے تجاوز کیا جائے ، اسی طرح یہاں حلت کا تعلق صرف سونے کے زیورات سے ہے ، نہ کہ ان سے بنے ہوئے برتنوں سے کیونکہ سونے (اور چاندی) سے بنے ہوئے برتن سب کے لیے حرام ہیں۔
قال الشيخ الألباني : صحيح، ابن ماجة (3595)
صحيح وضعيف سنن الترمذي الألباني : حديث نمبر 1720
Sayyidina Abu Musa Ash’ari reported that Allah’s Messenger ﷺ said, “Wearing silk and gold is forbidden to the men of my ummah. But (they are) allowed to their women.” [Nisai 5163]
Top