مؤطا امام مالک - کتاب ذبیحوں کے بیان میں - 941
عَنْ هِشَامِ بْنِ عُرْوَةَ عَنْ أَبِيهِ أَنَّهُ قَالَ سُئِلَ رَسُولُ اللَّهِ صَلَّى اللَّهُ عَلَيْهِ وَسَلَّمَ فَقِيلَ لَهُ يَا رَسُولَ اللَّهِ إِنَّ نَاسًا مِنْ أَهْلِ الْبَادِيَةِ يَأْتُونَنَا بِلُحْمَانٍ وَلَا نَدْرِي هَلْ سَمَّوْا اللَّهَ عَلَيْهَا أَمْ لَا فَقَالَ رَسُولُ اللَّهِ صَلَّى اللَّهُ عَلَيْهِ وَسَلَّمَ سَمُّوا اللَّهَ عَلَيْهَا ثُمَّ كُلُوهَا قَالَ مَالِك وَذَلِكَ فِي أَوَّلِ الْإِسْلَامِ قَالَ مَالِک وَذَلِکَ فِي أَوَّلِ الْإِسْلَامِ
عروہ بن زبیر سے روایت ہے کہ رسول اللہ (صلی اللہ علیہ وآلہ وسلم) سے سوال ہوا کہ بدو لوگ گوشے لے کر ہمارے پاس آتے اور ہم کو نہیں معلوم کہ انہوں نے بسم اللہ (صلی اللہ علیہ وآلہ وسلم) کہی تھی یا نہیں ذبح کے وقت۔ آپ (صلی اللہ علیہ وآلہ وسلم) نے فرمایا تم بسم اللہ کہہ کے اس کو کھالو۔ کہا مالک نے یہ حدیث ابتدائے اسلام کی ہے ،۔
Top