مشکوٰۃ المصابیح - طب اور جھاڑ پھونک کا بیان - 1486
مشکوٰۃ کے اکثر نسخوں میں یہاں صرف لفظ " باب " لکھا ہوا ہے جیسا کہ مؤلف مشکوٰۃ کی عادت ہے کہ وہ بعض مواقع پر صرف لفظ باب لکھ کر ایک باب قائم جو درحقیقت کوئی الگ سے اور مستقل باب نہیں ہوتا بلکہ بیان کردہ پہلے باب کے لواحق اور متممات پر مشتمل ہوتا ہے۔ لیکن ایک صحیح نسخہ میں اس موقع پر " باب فرالریاح " اور اسی طرح ایک دوسرے نسخہ میں " باب الریاح " لکھا ہوا ہے جس کا مطلب ہے " ہواؤں کا بیان " گویا اس باب میں ہواؤں سے متعلق احادیث نقل کی جائیں گی۔
Top