مسند امام احمد - حضرت ابوعبید کی حدیث۔ - 15402
حَدَّثَنَا عَفَّانُ حَدَّثَنَا أَبَانُ الْعَطَّارُ حَدَّثَنَا قَتَادَةُ عَنْ شَهْرِ بْنِ حَوْشَبٍ عَنْ أَبِي عُبَيْدٍ أَنَّهُ طَبَخَ لِرَسُولِ اللَّهِ صَلَّى اللَّهُ عَلَيْهِ وَسَلَّمَ قِدْرًا فِيهِ لَحْمٌ فَقَالَ رَسُولُ اللَّهِ صَلَّى اللَّهُ عَلَيْهِ وَسَلَّمَ نَاوِلْنِي ذِرَاعَهَا فَنَاوَلْتُهُ فَقَالَ نَاوِلْنِي ذِرَاعَهَا فَنَاوَلْتُهُ فَقَالَ نَاوِلْنِي ذِرَاعَهَا فَقَالَ يَا نَبِيَّ اللَّهِ كَمْ لِلشَّاةِ مِنْ ذِرَاعٍ قَالَ وَالَّذِي نَفْسِي بِيَدِهِ لَوْ سَكَتَّ لَأَعْطَتْكَ ذِرَاعًا مَا دَعَوْتَ بِهِ
حضرت ابوعبید سے مروی ہے کہ ایک مرتبہ انہوں نے نبی (صلی اللہ علیہ وآلہ وسلم) کے لئے ایک ہنڈیا میں گوشت پکایا نبی (صلی اللہ علیہ وآلہ وسلم) نے فرمایا مجھے اس کی دستی نکال کردو چناچہ میں نے نکال کردی تھوڑی دیر بعد نبی (صلی اللہ علیہ وآلہ وسلم) نے دوسری تیسری طلب فرمائی میں نے وہ بھی دیدی تھوڑی دیر بعد نبی (صلی اللہ علیہ وآلہ وسلم) نے پھر طلب فرمائی میں نے عرض کیا اے اللہ کے نبی (صلی اللہ علیہ وآلہ وسلم) ایک بکری کی کتنی دستیاں ہوتی ہیں نبی (صلی اللہ علیہ وآلہ وسلم) نے فرمایا کہ اس ذات کی قسم جس کے دست قدرت میں میری جان ہے اگر تم خاموش رہتے تو اس ہنڈیا سے اس وقت تک دستیاں نکلتی رہتیں جب تک تم اسے نکالتے رہتے۔
Top