مسند امام احمد - عبدالحمید بن صیفی کی اپنے دادا سے روایت - 15998
قَالَ حَدَّثَنَا أَبُو النَّضْرِ قَالَ حَدَّثَنَا عَبْدُ اللَّهِ بْنُ الْمُبَارَكِ عَنْ عَبْدِ الْحَمِيدِ بْنِ صَيْفِيٍّ عَنْ أَبِيهِ عَنْ جَدِّهِ قَالَ إِنَّ صُهَيْبًا قَدِمَ عَلَى النَّبِيِّ صَلَّى اللَّهُ عَلَيْهِ وَسَلَّمَ وَبَيْنَ يَدَيْهِ تَمْرٌ وَخُبْزٌ فَقَالَ ادْنُ فَكُلْ قَالَ فَأَخَذَ يَأْكُلُ مِنْ التَّمْرِ فَقَالَ لَهُ النَّبِيُّ صَلَّى اللَّهُ عَلَيْهِ وَسَلَّمَ إِنَّ بِعَيْنِكَ رَمَدًا فَقَالَ يَا رَسُولَ اللَّهِ إِنَّمَا آكُلُ مِنْ النَّاحِيَةِ الْأُخْرَى قَالَ فَتَبَسَّمَ النَّبِيُّ صَلَّى اللَّهُ عَلَيْهِ وَسَلَّمَ
عبدالحمید بن صیفی کے دادا سے مروی ہے کہ ایک مرتبہ نبی (صلی اللہ علیہ وآلہ وسلم) کی خدمت میں حضرت صہیب رومی حاضر ہوئے اس وقت نبی (صلی اللہ علیہ وآلہ وسلم) کے سامنے کھجوریں اور روٹی رکھی ہوئی تھی، نبی (صلی اللہ علیہ وآلہ وسلم) نے صہیب سے فرمایا کہ قریب آجاؤ اور کھاؤ، چناچہ وہ کھجوریں کھانے لگے، نبی (صلی اللہ علیہ وآلہ وسلم) نے فرمایا تمہیں تو آشوب چشم ہے ؟ انہوں نے عرض کیا یا رسول اللہ ! میں دوسری جانب سے کھا رہا ہوں، اس پر نبی (صلی اللہ علیہ وآلہ وسلم) مسکرانے لگے۔
Top