مسند امام احمد - حضرت زیاد بن حارث الصدائی (رض) کی حدیثیں - 16882
حَدَّثَنَا مُحَمَّدُ بْنُ يَزِيدَ الْوَاسِطِيُّ عَنْ عَبْدِ الرَّحْمَنِ بْنِ زِيَادٍ الْإِفْرِيقِيِّ عَنْ زِيَادِ بْنِ نُعَيْمٍ الْحَضْرَمِيِّ عَنْ زِيَادِ بْنِ الْحَارِثِ الصُّدَائِيِّ قَالَ قَالَ رَسُولُ اللَّهِ صَلَّى اللَّهُ عَلَيْهِ وَسَلَّمَ أَذِّنْ يَا أَخَا صُدَاءٍ قَالَ فَأَذَّنْتُ وَذَلِكَ حِينَ أَضَاءَ الْفَجْرُ قَالَ فَلَمَّا تَوَضَّأَ رَسُولُ اللَّهِ صَلَّى اللَّهُ عَلَيْهِ وَسَلَّمَ قَامَ إِلَى الصَّلَاةِ فَأَرَادَ بِلَالٌ أَنْ يُقِيمَ فَقَالَ رَسُولُ اللَّهِ صَلَّى اللَّهُ عَلَيْهِ وَسَلَّمَ يُقِيمُ أَخُو صُدَاءٍ فَإِنَّ مَنْ أَذَّنَ فَهُوَ يُقِيمُ
حضرت زیاد بن حارث (رض) سے مروی ہے کہ ایک مرتبہ طلوع فجر کے وقت نبی (صلی اللہ علیہ وآلہ وسلم) نے انہیں اذان دینے کا حکم دیا، چناچہ میں نے اذان دی، جب نبی (صلی اللہ علیہ وآلہ وسلم) وضو کر کے نماز کے لئے کھڑے ہوئے تو اقامت کے وقت حضرت بلال (رض) نے اقامت کہنا چاہی، نبی (صلی اللہ علیہ وآلہ وسلم) نے فرمایا صدائی بھائی اقامت کہے کیونکہ جو شخص اذان دیتا ہے وہی اقامت بھی کہتا ہے۔
Top