مسند امام احمد - حضرت شرید بن سوید ثقفی (رض) کی حدیثیں - 17270
حَدَّثَنَا عَبْدُ الصَّمَدِ حَدَّثَنَا حَمَّادُ بْنُ سَلَمَةَ حَدَّثَنَا مُحَمَّدُ بْنُ عَمْرٍو عَنْ أَبِي سَلَمَةَ عَنِ الشَّرِيدِ أَنَّ أُمَّهُ أَوْصَتْ أَنْ يُعْتِقَ عَنْهَا رَقَبَةً مُؤْمِنَةً فَسَأَلَ رَسُولَ اللَّهِ صَلَّى اللَّهُ عَلَيْهِ وَسَلَّمَ عَنْ ذَلِكَ فَقَالَ عِنْدِي جَارِيَةٌ سَوْدَاءُ أَوْ نُوبِيَّةٌ فَأَعْتِقُهَا فَقَالَ ائْتِ بِهَا فَدَعَوْتُهَا فَجَاءَتْ فَقَالَ لَهَا مَنْ رَبُّكِ قَالَتْ اللَّهُ قَالَ مَنْ أَنَا فَقَالَتْ أَنْتَ رَسُولُ اللَّهِ صَلَّى اللَّهُ عَلَيْهِ وَسَلَّمَ قَالَ أَعْتِقْهَا فَإِنَّهَا مُؤْمِنَةٌ
حضرت شرید (رض) سے مروی ہے کہ انہیں ان کی والدہ نے یہ وصیت کی کہ ان کی طرف سے ایک مسلمان غلام آزاد کردیں، انہوں نے نبی (صلی اللہ علیہ وآلہ وسلم) سے اس کے متعلق پوچھتے ہوئے کہا کہ میرے پاس حبشہ کے ایک علاقے نوبیہ کی ایک باندی ہے، کیا میں اسے آزاد کرسکتا ہوں ؟ نبی (صلی اللہ علیہ وآلہ وسلم) نے فرمایا اسے لے کر آؤ، میں نے اسے بلایا، وہ آگئی، نبی (صلی اللہ علیہ وآلہ وسلم) نے اس سے پوچھا تیرا رب کون ہے ؟ اس نے کہا اللہ، نبی (صلی اللہ علیہ وآلہ وسلم) نے پوچھا میں کون ہوں ؟ اس نے جواب دیا آپ اللہ کے رسول ہیں، نبی (صلی اللہ علیہ وآلہ وسلم) نے فرمایا اسے آزاد کردو، یہ مسلمان ہے۔
Top