سنن النسائی - پاکی کا بیان - 1
أَخْبَرَنَا قُتَيْبَةُ بْنُ سَعِيدٍ، ‏‏‏‏‏‏قَالَ:‏‏‏‏ حَدَّثَنَا سُفْيَانُ، ‏‏‏‏‏‏عَنْ الزُّهْرِيِّ، ‏‏‏‏‏‏عَنْ أَبِي سَلَمَةَ، ‏‏‏‏‏‏عَنْ أَبِي هُرَيْرَةَ، ‏‏‏‏‏‏أَنّ النَّبِيَّ صَلَّى اللَّهُ عَلَيْهِ وَسَلَّمَ، ‏‏‏‏‏‏قَالَ:‏‏‏‏ إِذَا اسْتَيْقَظَ أَحَدُكُمْ مِنْ نَوْمِهِ، ‏‏‏‏‏‏فَلَا يَغْمِسْ يَدَهُ فِي وَضُوئِهِ حَتَّى يَغْسِلَهَا ثَلَاثًا، ‏‏‏‏‏‏فَإِنَّ أَحَدَكُمْ لَا يَدْرِي أَيْنَ بَاتَتْ يَدُهُ.
ابوہریرہ (رض) سے روایت ہے کہ نبی اکرم نے فرمایا : جب تم میں سے کوئی شخص نیند سے جاگ جائے تو اپنا ہاتھ اپنے وضو کے پانی میں نہ ڈالے، یہاں تک کہ اسے تین بار دھو لے، کیونکہ وہ نہیں جانتا کہ اس کا ہاتھ رات میں کہاں کہاں رہا ہے ۔
تخریج دارالدعوہ : صحیح البخاری/الوضوء ٢٦ (١٦٢) ، صحیح مسلم/الطہارة ٢٦ (٢٧٨) ، سنن ابی داود/الطھارة ٤٩ (١٠٣) ، سنن الترمذی/الطھارة ١٩ (٢٤) ، سنن ابن ماجہ/الطھارة ٤٠ (٣٩٣) ، (تحفة الأشراف : ١٥١٤٩) ، موطا امام مالک/ فیہ ٢ (٩) ، مسند احمد ٢/٢٤١، ٢٥٣، ٢٥٩، ٣٤٩، ٣٨٢، سنن الدارمی/الطہارة ٧٨ (٧٩٣) ، ویأتي عند المؤلف برقم : ١٦١، ٤٤١ (صحیح )
قال الشيخ الألباني : صحيح ق وليس عند خ العدد
صحيح وضعيف سنن النسائي الألباني : حديث نمبر 1
It was narrated that Abu Hurairah said: "A man came to the Prophet (صلی اللہ علیہ وسلم) and said: 'O Messenger of Allah, what kind of charity brings the greatest reward? He said: 'To give in charity when you are healthy and feeling miserly, and fearing poverty and hoping for a long life. Do not wait until the (death rattle) reaches the throat and then say: "This is for so and so" and it nearly became the property of so and so (the heirs).
Top