سنن النسائی - جنائز کے متعلق احادیث - 1823
أَخْبَرَنَا هَارُونُ بْنُ عَبْدِ اللَّهِ، ‏‏‏‏‏‏حَدَّثَنَا مَعْنٌ، ‏‏‏‏‏‏قَالَ:‏‏‏‏ حَدَّثَنَا إِبْرَاهِيمُ بْنُ سَعْدٍ، ‏‏‏‏‏‏عَنِ الزُّهْرِيِّ، ‏‏‏‏‏‏عَنْ عُبَيْدِ اللَّهِ بْنِ عَبْدِ اللَّهِ بْنِ عُتْبَةَ، ‏‏‏‏‏‏عَنْ أَبِي هُرَيْرَةَ، ‏‏‏‏‏‏أَنّ رَسُولَ اللَّهِ صَلَّى اللَّهُ عَلَيْهِ وَسَلَّمَ قَالَ:‏‏‏‏ لَا يَتَمَنَّيَنَّ أَحَدٌ مِنْكُمُ الْمَوْتَ إِمَّا مُحْسِنًا فَلَعَلَّهُ أَنْ يَزْدَادَ خَيْرًا،‏‏‏‏ وَإِمَّا مُسِيئًا فَلَعَلَّهُ أَنْ يَسْتَعْتِبَ.
ابوہریرہ رضی الله عنہ سے روایت ہے کہ رسول اللہ نے فرمایا : تم میں سے کوئی (بھی) ہرگز موت کی آرزو و تمنا نہ کرے، (کیونکہ) یا تو وہ نیک ہوگا تو ہوسکتا ہے زیادہ نیکی کرے، یا برا ہوگا تو ہوسکتا ہے وہ برائی سے توبہ کرلے ١ ؎۔
تخریج دارالدعوہ : تفرد بہ النسائي، (تحفة الأشراف : ١٤١١٧) ، مسند احمد ٢/٢٣٦ (صحیح )
وضاحت : ١ ؎: اس لیے زندہ رہنا ہی اس کے لیے بہتر ہے۔
قال الشيخ الألباني : صحيح
صحيح وضعيف سنن النسائي الألباني : حديث نمبر 1818
It was narrated from Abu Hurairah (RA) that the Messenger of Allah said: "None of you should wish for death. Either he is a doer of good, so perhaps he may do more good, or he is an evil-doer but perhaps he will give up his evil ways."
Top