سنن النسائی - خوف کی نماز کا بیان - 1534
أَخْبَرَنَا إِسْحَاقُ بْنُ إِبْرَاهِيمَ، ‏‏‏‏‏‏قال:‏‏‏‏ حَدَّثَنَا وَكِيعٌ، ‏‏‏‏‏‏قال:‏‏‏‏ حَدَّثَنَا سُفْيَانُ، ‏‏‏‏‏‏عَنِ الْأَشْعَثِ بْنِ أَبِي الشَّعْثَاءِ، ‏‏‏‏‏‏عَنِ الْأَسْوَدِ بْنِ هِلَالٍ، ‏‏‏‏‏‏عَنْ ثَعْلَبَةَ بْنِ زَهْدَمٍ، ‏‏‏‏‏‏قال:‏‏‏‏ كُنَّا مَعَ سَعِيدِ بْنِ الْعَاصِي بِطَبَرِسْتَانَ وَمَعَنَا حُذَيْفَةُ بْنُ الْيَمَانِ،‏‏‏‏ فَقَالَ:‏‏‏‏ أَيُّكُمْ صَلَّى مَعَ رَسُولِ اللَّهِ صَلَّى اللَّهُ عَلَيْهِ وَسَلَّمَ صَلَاةَ الْخَوْفِ ؟ فَقَالَ حُذَيْفَةُ:‏‏‏‏ أَنَا فَوَصَفَ،‏‏‏‏ فَقَالَ:‏‏‏‏ صَلَّى رَسُولُ اللَّهِ صَلَّى اللَّهُ عَلَيْهِ وَسَلَّمَ صَلَاةَ الْخَوْفِ بِطَائِفَةٍ رَكْعَةً صَفٍّ خَلْفَهُ وَطَائِفَةٍ أُخْرَى بَيْنَهُ وَبَيْنَ الْعَدُوِّ، ‏‏‏‏‏‏فَصَلَّى بِالطَّائِفَةِ الَّتِي تَلِيهِ رَكْعَةً،‏‏‏‏ ثُمَّ نَكَصَ هَؤُلَاءِ إِلَى مَصَافِّ أُولَئِكَ،‏‏‏‏ وَجَاءَ أُولَئِكَ فَصَلَّى بِهِمْ رَكْعَةً.
ثعلبہ بن زہدم کہتے ہیں کہ ہم سعید بن عاصی کے ساتھ طبرستان میں تھے، ہمارے ساتھ حذیفہ بن یمان (رض) بھی تھے، سعید نے پوچھا : تم میں سے کس نے رسول اللہ کے ساتھ خوف کی نماز پڑھی ہے ؟ تو خذیفہ (رض) نے کہا : میں نے، تو انہوں نے بیان کرتے ہوئے کہا کہ رسول اللہ نے ایک گروہ کو جو آپ کے پیچھے صف باندھے تھا ایک رکعت پڑھائی، اور دوسرا گروہ آپ کے اور دشمنوں کے مابین ڈٹا ہوا تھا، تو جو گروہ آپ کے ساتھ تھا اسے آپ نے ایک رکعت پڑھائی، پھر وہ لوگ ان لوگوں کی جگہوں پر چلے گئے جو دشمن کے سامنے صف باندھے تھے، اور وہ لوگ ان کی جگہ آگئے تو آپ نے انہیں (بھی) ایک رکعت پڑھائی۔
تخریج دارالدعوہ : سنن ابی داود/الصلاة ٢٨٧ (١٢٤٦) مختصراً ، مسند احمد ٥/٣٨٥، ٣٩٥، ٣٩٩، ٤٠٤، ٤٠٦، (تحفة الأشراف : ٣٣٠٤) (صحیح )
قال الشيخ الألباني : صحيح
صحيح وضعيف سنن النسائي الألباني : حديث نمبر 1529
It was narrated that Tha'labah bin Zahdam said: "We were with Sa'eed bin Al-'Asi in Tabaristan, and Hudhaifah bin Al-Yaman was with us. He said: 'Which of you offered the fear prayer with the Messenger of Allah (صلی اللہ علیہ وسلم)?' Hudhaifah said: 'I did', and he described it. He said: 'The Messenger of Allah (صلی اللہ علیہ وسلم) offered the fear prayer, leading one group who had formed rows behind him in praying one rak'ah, while the other group was between him and the enemy. So he led the group that was near him in praying one rak'ah, then they left and took the place of others, and the others came and he led them in praying one rak'ah.'"
Top