سنن النسائی - قربانی سے متعلق احادیث مبارکہ - 4381
أَخْبَرَنَا سُلَيْمَانُ بْنُ سَلْمٍ الْبَلْخِيُّ، ‏‏‏‏‏‏قَالَ:‏‏‏‏ حَدَّثَنَا النَّضْرُ وَهُوَ ابْنُ شُمَيْلٍ، ‏‏‏‏‏‏قَالَ:‏‏‏‏ أَنْبَأَنَا شُعْبَةُ، ‏‏‏‏‏‏عَنْ مَالِكِ بْنِ أَنَسٍ، ‏‏‏‏‏‏عَنِ ابْنِ مُسْلِمٍ، ‏‏‏‏‏‏عَنْ سَعِيدِ بْنِ الْمُسَيِّبِ، ‏‏‏‏‏‏عَنْ أُمِّ سَلَمَةَ، ‏‏‏‏‏‏عَنِ النَّبِيِّ صَلَّى اللَّهُ عَلَيْهِ وَسَلَّمَ قَالَ:‏‏‏‏ مَنْ رَأَى هِلَالَ ذِي الْحِجَّةِ فَأَرَادَ أَنْ يُضَحِّيَ فَلَا يَأْخُذْ مِنْ شَعْرِهِ، ‏‏‏‏‏‏وَلَا مِنْ أَظْفَارِهِ حَتَّى يُضَحِّيَ.
ام المؤمنین ام سلمہ رضی اللہ عنہا روایت کرتی ہیں کہ نبی اکرم نے فرمایا : جس شخص نے ذی الحجہ کے مہینے کا چاند دیکھا پھر قربانی کرنے کا ارادہ کیا تو وہ اپنے بال اور ناخن قربانی کرنے تک نہ لے ١ ؎۔
تخریج دارالدعوہ : صحیح مسلم/الأضاحی ٣ (١٩٧٧) ، سنن ابی داود/الضحایا ٣ (٢٧٩١) ، سنن الترمذی/الضحایا ٢٤(١٥٢٣) ، سنن ابن ماجہ/الضحایا ١١ (٣١٥٠) ، (تحفة الأشراف : ١٨١٥٢) مسند احمد ٦/٢٨٩، ٣٠١، ٣١١، سنن الدارمی/الأضاحی ٢ (١٩٩٠) ، ویأتی برقم : ٤٣٦٧-٤٣٦٩) (صحیح )
وضاحت : ١ ؎: بال اور ناخن وغیرہ کچھ نہ کاٹے، جمہور کے نزدیک یہ حکم استحبابی ہے۔
قال الشيخ الألباني : صحيح
صحيح وضعيف سنن النسائي الألباني : حديث نمبر 4361
It was narrated from Ummm Salamah that the Prophet (صلی اللہ علیہ وسلم) said: "Whoever sees the new crescent of Dhul-Hijjah and wants to offer a sacrifice, let him not remove any of his hair or nails until he has offered the sacrifice.
Top