سنن النسائی - میقاتوں سے متعلق احادیث - 2658
أَخْبَرَنَا قُتَيْبَةُ، ‏‏‏‏‏‏قَالَ:‏‏‏‏ حَدَّثَنَا اللَّيْثُ بْنُ سَعْدٍ، ‏‏‏‏‏‏قَالَ:‏‏‏‏ حَدَّثَنَا نَافِعٌ، ‏‏‏‏‏‏عَنْ عَبْدِ اللَّهِ بْنِ عُمَرَ، ‏‏‏‏‏‏أَنَّ رَجُلًا قَامَ فِي الْمَسْجِدِ، ‏‏‏‏‏‏فَقَالَ:‏‏‏‏ يَا رَسُولَ اللَّهِ مِنْ أَيْنَ تَأْمُرُنَا أَنْ نُهِلَّ ؟ قَالَ رَسُولُ اللَّهِ صَلَّى اللَّهُ عَلَيْهِ وَسَلَّمَ:‏‏‏‏ يُهِلُّ أَهْلُ الْمَدِينَةِ مِنْ ذِي الْحُلَيْفَةِ، ‏‏‏‏‏‏وَيُهِلُّ أَهْلُ الشَّامِ مِنْ الْجُحْفَةِ، ‏‏‏‏‏‏وَيُهِلُّ أَهْلُ نَجْدٍ مِنْ قَرْنٍ، ‏‏‏‏‏‏قَالَ ابْنُ عُمَرَ:‏‏‏‏ وَيَزْعُمُونَ أَنَّ رَسُولَ اللَّهِ صَلَّى اللَّهُ عَلَيْهِ وَسَلَّمَ، ‏‏‏‏‏‏قَالَ:‏‏‏‏ وَيُهِلُّ أَهْلُ الْيَمَنِ مِنْ يَلَمْلَمَوَكَانَ ابْنُ عُمَرَ يَقُولُ:‏‏‏‏ لَمْ أَفْقَهْ هَذَا مِنْ رَسُولِ اللَّهِ صَلَّى اللَّهُ عَلَيْهِ وَسَلَّمَ.
عبداللہ بن عمر رضی الله عنہما سے روایت ہے کہ ایک شخص مسجد (نبوی) میں کھڑا ہوا اور پوچھنے لگا : اللہ کے رسول ! آپ ہمیں کہاں سے تلبیہ پکارنے کا حکم دیتے ہیں ؟ رسول اللہ نے فرمایا : اہل مدینہ ذوالحلیفہ سے تلبیہ پکاریں گے، اور اہل شام حجفہ سے اور اہل نجد قرن سے۔ عبداللہ بن عمر (رض) کہتے ہیں کہ لوگوں کا خیال ہے کہ رسول اللہ نے (یہ بھی) فرمایا : اہل یمن یلملم سے تلبیہ پکاریں گے ، ابن عمر (رض) کہتے تھے کہ میں نے رسول اللہ سے اسے نہیں سنا ہے۔
تخریج دارالدعوہ : صحیح البخاری/العلم ٥٢ (١٣٣) ، (تحفة الأشراف : ٩٢٩١) (صحیح )
قال الشيخ الألباني : صحيح
صحيح وضعيف سنن النسائي الألباني : حديث نمبر 2652
It was narrated from ‘Abdullah bin ‘Umar that a man stood up in the Masjid and said: “Messenger of Allah ﷺ, from where do you command us to enter Ihram?” The Messenger of Allah ﷺ said: “The people of Al-Madinah should enter Ihrarn from Dhul-Hulaifah, the people of Ash-Sham should enter Ihram from Al-Juhfah, the people of Najd should enter Ihram from Qarn.” Ibn ‘Umar said: “And they say that the Messenger of Allah ﷺ said: ‘The people of Yemen should enter into Ihram from Yalamlam.” And ‘Ibn ‘Umar used to say: “I did not hear this from the Messenger of Allah ﷺ .“ (Sahih).
Top